حکومت غلط فیصلوں سے ملک کو تباہی کی جانب لے جارہی ہے، ملک میں سینسرڈ جمہوریت مسلط کردگی گئی ہے، ابھی تو یہ آغاز ہے، نہ جانے آگے کیا ہوگا: بلاول بھٹو

چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو کہتے ہیں کہ حکومت غلط فیصلوں سے ملک کو تباہی کی جانب لے جارہی ہے، ملک میں سینسرڈ جمہوریت مسلط کردگی گئی ہے، ابھی تو یہ آغاز ہے، نہ جانے آگے کیا ہوگا۔
اسلام آباد میں تقریب سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ پاکستان اہم سیاسی دور سے گزررہا ہے مگر حکومت غلط فیصلوں سے ملک کو تباہی کی جانب لے جارہی ہے۔
انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی جذبات میں آکر نظام کو خطرے میں نہیں ڈال سکتی، ملک ایک منتخب حکومت کے حوالے کیا جاچکا ہے، ملک میں سینسر جمہوریت مسلط کردگی گئی ہے، ابھی تو یہ آغاز ہے، نہ جانے آگے کیا ہوگا، ملک چندے پر نہیں چل سکتا۔
چیئرمین پیپلز پارٹی کہتے ہیں کہ سوشل میڈیا پر خارجہ پالیسی بیان کی جارہی ہے، خدارا اہم معاملات کو مذاق نہ بنایا جائے، وزیراعظم عمران خان نے وزیر خارجہ کو اقوام متحدہ میں بھیجا، خان صاحب کو بتانا ہوگا وہ اقوام متحدہ خود کیوں نہیں گئے۔
بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ آج بھی ان کے والد کے خلاف جھوٹے مقدمات بنائے گئے، غیر جمہوری دور میں عدالتوں کو سیاسی مقاصد کیلئے استعمال کیا گیا، نہ بھٹو کو انصاف ملا، نہ ہی بینظیر بھٹو شہید کو انصاف ملا۔
ان کا کہنا تھا کہ سابق صدر آصف علی زرداری 30 سال سے عدالتوں کے چکر لگا رہے ہیں، بند مقدمات دوبارہ کھولے جارہے ہیں، یہ سلسلہ بند ہونا چاہئیے، بھٹو اور بی بی شہید کو انصاف نہ ملا تو عوام کو کیا ملے گا، انصاف کیلئے کسی بھی حد تک جاسکتے ہیں۔
پی پی چیئرمین کا کہنا تھا کہ سیاسی رہنماؤں کو انتخابات کے درمیان شہید کر دیا جاتا ہے، وزیراعظم کہتے ہیں ملک میں دہشت گردی ختم کردی ہے۔
بلاول کا کہنا تھا کہ نوابزادہ نصراللہ نے سیاسی جماعتوں کو متحد کیا، یہ وہ جمہوریت نہیں جس کیلئے نوابزادہ نصراللہ نے جدوجہد کی۔
بلاول کا موقف تھا کہ عوامی ایشوز کی سیاست کر کے جمہوریت کو کامیاب کیا جاسکتا ہے، جبکہ پی ٹی آئی نان ایشوز کی سیاست کر رہی ہے۔
پی پی کے نوجوان رہنماء نے کہا کہ دریائے سندھ پر بننے والے ڈیمز کیلئے پانی کہاں سے آئے گا، سندھ پہلے ہی پانی کے اپنے جائز حق سے محروم ہے، پانی کے بحران کی اصل وجہ غیر منصفانہ تقسیم ہے۔
بلاول کا کہنا تھا کہ حکومت نے 73 کے آئین کی اصل حالت ختم کی تو احتجاج کریں گے، ہم وفاق کو کسی صورت ختم نہیں ہونے دیں گے
50% LikesVS
50% Dislikes

Leave a Reply

Please Login to comment
  Subscribe  
Notify of
%d bloggers like this: